آنسو آنسو لمحے دے کر
گہری چپ سے جوڑ دیا ہے
درد بھی لازم
چپ بھی لازم
کیسامشکل موڑ دیا رے
کیسا مشکل موڑ دیا رے
کیسا مشکل موڑ دیا رے
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی
درد رضا ہے
درد ہی راضی
درد نے جیتی
درد کی بازی
چپ نگری کا چپ شاہ رقصم
درد قلندر درد ہی مستم
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی
قائم دائم مستی کردے
چپ کی روشن بستی کر دے
سن لے کوکو درد کی ھوھو
درد کی ھو ھو
درد کی ھو ھو
درد ہی خوشبو
درد ہی جگنو
درد ہی میں میں
درد ہی تو تو
درد کہانی
درد نشانی
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی