رات کے پچھلے پہر کی باتیں
درد کے نوحے ہوتی ہیں
وہ درد کہ جس کو چپ رہنا ہے
من نگری میں گم رہنا ہے
اندر مستی مستی مستم
باہر ہستی ہستی ہستم
مست قلندر ہستی کیا ہے؟
گہری چپ کی مستی کیا ہے؟
درد کے نوحے کوئل کوکو
درد کے نوحے اللہ ھو ھو
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی
درد ہی زندہ
درد ہی قائم
درد بقا ہے
درد ہی دائم
من نگری کی چپ دمادم
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی
درد ہی رشتہ
درد ہی ناطہ
درد ہی رقصم
درد ہی طبلہ
رات کے پچھلے پہر کی چیخیں
گہری چپ کے چپ ساگر میں
آنسو آنسو درد پرولو
مست قلندر کچھ تو بولو
درد کی شدت درد ہی ہوگی
درد مقدر
درد نصیبا
دردہی لے لے
درد طبیبا!
مستی مستی مستم حی
ہستی ہستی ہستم حی
رات کے پچھلے پہر کی باتیں
ذکر کی تسبیح
فکر کی مالا
درد کا ہے بس
درد حوالہ
درد ہی درد ہے
درد بہت ہے
درد ہی لے لو
کچھ تو لے لو
سب کچھ لے لو
زمزم دے دو