محبتوں کا شعور ڈھونڈنے نکلی ہو۔۔۔
سنو، اے زندگی ۔۔۔
اس قدر دیر سے آؤ گی تو مشکل ہو گی۔
خاکے ، خاک کے پیکر نے بنا رکھے ہیں
رنگ سارے گہرے پانیوں میں گھل گئے ہیں
میرے رنگ اب میرے نہیں
رنگ میرے تھے بھی کبھی؟
اب تم بھی آجاؤ
سوال کرنے
گہری چپ کی بکل مارے
صحرا میں اگے برگد کے پیڑ تلے بیٹھا
محبتوں کی تسبیح رولتا تمہیں زہر کیوں لگتا ہوں؟
آ جاؤ، آ جاؤ
کمبل میں آجاؤ
کمبل ہی لے لو سارا
مجھے گہرے پانیوں میں اترنا ہے
لو سنبھالو محبتوں کی گدی
اور گدی نشین ہو جاؤ
یا چلو میرے ساتھ
نور کے ساگر میں ڈوب جائیں
جب تک گہرے پانیوں کی لوری ختم نہیں ہوتی۔
یاحی یاقیوم